وفاقی وزارت خزانہ نے گلگت بلتستان کا غیر ترقیاتی بجٹ 32 سے 45 ارب روپے کرنے کی منظوری دیدی

وفاقی وزارت خزانہ نے گلگت بلتستان کا غیر ترقیاتی بجٹ32 سے 45ارب روپے کرنے کی منظوری دیدی۔ وفاقی وزارت خزانہ کے سیکشن آفیسر کی جانب سے صوبائی سیکرٹری خزانہ کے نام ایک مراسلے میں کہا گیا ہے کہ وفاقی وزارت خزانہ نے صوبائی حکومت کے مطالبے پر غیر ترقیاتی بجٹ میں 13ارب روپے کا اضافہ کرتے ہوئے45ارب کرنے کی منظوری دی ہے۔ جی بی کے مالی سال 2021-22 کیلئے غیر ترقیاتی بجٹ 45ارب روپے ہوگا۔دوسری جانب جاری ہونے والے سرکاری بیان میں کہا گیا ہے کہ ریگولر بجٹ سے درپیش مسائل کے مستقل حل کے لئے وزیر اعلیٰ خالد خورشید نے گلگت بلتستان کے ریگولر بجٹ میں خاطر خواہ اضافے کے لئے گزشتہ 5 مہینوں میں وفاقی سطح پر موثر و متواتر کوششیں کیں۔ وزیراعلی نے یہ معاملہ وزیر اعظم عمران خان کے سامنے ٹھوس دلائل و توجیہات کے ساتھ بیان کیا جس کی وجہ سے یہ تاریخی اضافہ ممکن ہوا۔ ترجمان کے مطابق ماضی کے حکمران گلگت بلتستان کے ریگولر بجٹ میں خاطر خواہ اضافہ کرانے میں مکمل ناکام رہے جبکہ مشکل ملکی معاشی صورتحال کے باوجود 2019 سے 2020 کے درمیان وزیراعظم عمران خان کی وفاقی حکومت نے یہ رقم 27 ارب سے بڑھا کر 32 ارب کر دی تھی۔ یوں وفاق میں پی ٹی آئی کے تین سالہ دور حکومت میں گلگت بلتستان کے ریگولر بجٹ میں 18 ارب سے زائد کا تاریخی و ریکارڈ اضافہ ہوا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں