گلگت بلتستان جیسے علاقے میں بڑی تعداد میں اشہاریوں کا ہونا باعث تشویش ہے، اپیلیٹ کورٹ

چیف جسٹس گلگت بلتستان جسٹس سید ارشد حسین شاہ اور سینئر جج جسٹس وزیر شکیل احمد پر مشتمل ڈویژنل بینچ نے 24 مقدمات کی سماعت کی اورمتعدد مقدمات پر فیصلہ سنایا اور متعدد مقدمات میں نوٹسسز جاری کیے گلگت بلتستان میں اشتہاری مجرموں کو پکڑنے کے کیس میں دوران سماعت ڈی آئی جی دیامر رینج نے عدالت کو بتایا کہ ہم نے گزشتہ تین ماہ میں 22 اشتہاریوں کو گرفتار کیا جس پر عدالت نے عدم اطمنان کا اظہار کرتے ہوے کہا کہ اس عرصے میں اس سے دگنی تعداد مفرور ہوگئی گلگت بلتستان جیسے علاقے میں بڑی تعداد میں اشہاریوں کا ہونا باعث تشویش ہے اس سے معاشرے میں عدم تحفظ کا احساس پیدا ہوتا ہے لوگوں کی جان مال کا تحفظ ہم سب کی ذمہ داری ہے۔ معزز عدالت نے سیکرٹری ہوم گلگت بلتستان اور انسپکٹر جنرل آف پولیس گلگت بلتستان کو ذاتی حیثیت میں تفصیلی رپورٹ کے ساتھ 25 مئی کو عدالت میں پیش ہونے کا حکم دیا اور کیس کو 25 مئی تک ملتوی کر دیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں