گلگت شہرسے تمام لاری اڈے بسین کھاری منتقل کئے جائیں: شرافت حسین شاہ

گلگت : پاکستان پیپلز پارٹی گلگت بلتستان کے رہنما شرافت حسین شاہ نے میڈیا کو جاری اپنے ایک بیان میں وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان ، چیف سیکریٹری گلگت بلتستان اور دیگر متعلقہ حکام سے اپیل کرتے ہوئے کہا ہے کہ گلگت شہر سے تمام لاڑی اڈوں کو بسین کھاری منتقل کریں تاکہ امپھری سے لیکر بسین تک نہ صرف نیا شہر آباد ہو بلکہ مارکیٹیں ،
ہوٹلز اور دفاتر بننے سے لوگوں کو روزگار ملے ۔ انہوں نے کہا ہے کہ جوٹیال کی طرف سے مناور تک ایک نیا شہر آباد ہو رہا ہے جہاں پر مارکیٹیں ، ہوٹلز ، سرکاری دفاتر بن رہی ہیں جبکہ دوسری جانب شہر دوسرے کونے میں صرف پونیال روڈ تک ہی دفاتر اور مارکیٹیں بنی ہوئی ہیں جس سے نہ صرف امپھری اور بسین کے عوام کو مسائل کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے بلکہ شہر کے اندر ٹریفک بھی متاثر ہو رہی ہے اور بے روزگار میں آئے روز اضافے کی وجہ سے امپھری اور بسین سائیڈ کے شہریوں کو بھی مسائل کا سامنا ہے ۔ شرافت حسین شاہ کنگ نے مزید کہا ہے کہ بسین کھاری میں لاڑی اڈوں کے قیام سے وہاں مارکیٹیں ، ہوٹلز ، پلازے اور سرکاری دفاتر کا قیام عمل میں لایا جا سکے گا جس سے نہ صرف شہر میں ٹریفک کے مسائل حل ہونگے بلکہ بسین اور امپھری سائیڈ کے لوگوں کو روزگار بھی ملے گا ۔ انہوں نے وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان سے اپیل کی ہے کہ وہ اس معاملے پر نوٹس لیتے ہوئے چیف سیکریٹری گلگت بلتستان ، آئی جی پی گلگت بلتستان سمیت دیگر متعلقہ حکام کو اس حوالے سے اقدامات اٹھانے کی ہدایات کریں ۔ انہوں نے کہا کہ اگر وزیر اعلیٰ نے اس معاملے پر سنجیدگی سے عمل درآمد کرایا تو نہ صرف ایک نیا شہر آباد ہوگا بلکہ شہر میں بے روزگار ی میں خاطر خواہ کمی بھی آئیگی اور لوگوں کو روزگار کے نئے مواقع میسر ہونگے ۔ شرافت حسین شاہ کنگ نے بسین کھاری میں زمینوں کے ریٹس بھی موزوں ہیں ، پینے کا صاف پانی اور بجلی بھی وافر مقدار میں دستیاب ہے اگر وہاں پر نئے سرکاری دفاتر بنائے جائینگے تو حکومت کیلئے بھی آسانیاں ہونگی جبکہ دوسری جانب جوٹیال کی طرف زمینوں کے ریٹس کروڑوں تک پہنچ چکے ہیں جس سے نہ صرف سرکاری دفاتر کے لئے زمینوں کے حصول کے دوران سرکاری خزانے کو بھی بھاری نقصان پہنچ رہا ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں