دیامر بھاشا ڈیم کی تعمیر کیلئے معاہدے پر دستخط ہوگئے

دیامر بھاشا ڈیم کی تعمیر کیلئے معاہدے پر دستخط ہوگئے، ڈیم کے مرکزی حصے کی تعمیر کیلئے 442 ارب روپے کا ٹھیکہ پاور چائنا اور فرنٹیئر ورکس آرگنائزیشن (ایف ڈبلیو او) کو مشترکہ طور پر دیا گیا ہے۔ ترجمان وزارت آبی وسائل کے مطابق معاہدے پر بھاشا ڈیم کے چیف ایگزیکٹو آفیسر عامر بشیر نے دستخط کیے جب کہ پاور چائنا کی جانب سے معاہدے پر چینی کمپنی کے نمائندے نے دستخط کیے۔ترجمان کے مطابق کنٹریکٹ میں ڈائی ورژن سسٹم، مین ڈیم، پل اور تانگیر پن بجلی گھر کی تعمیر شامل ہے۔واٹر اینڈ پاور ڈویلپمنٹ اتھارٹی (واپڈا) کے چیئرمین مزمل حسین نے بتایا کہ دیامر بھاشا ڈیم پر لاگت کا کل تخمینہ 1406.5 ارب روپے ہے اور یہ 2028 میں مکمل ہوگا۔ چیئرمین واپڈا کے مطابق دیا مر بھاشا ڈیم میں پانی ذخیرہ کرنے کی صلاحیت 8.1 ملین ایکڑ فٹ ہوگی جب کہ ڈیم میں بجلی پیدا کرنے کی صلاحت 4500 میگاواٹ ہوگی جس سے نیشنل گرڈکو سالانہ 18 ارب یونٹ بجلی ملیگی۔

اس موقع پر تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر برائے آبی وسائل فیصل واوڈاکا کہنا تھا کہ آج کا دن ملکی تاریخ کا بڑا دن ہے ، 5 دہائیوں بعد اتنا بڑا منصوبہ شروع ہوا، دیامربھاشا ڈیم پاکستان کی واٹر، فوڈ اور انرجی سیکیورٹی کیلئے اہم منصوبہ ہے۔ان کا کہنا تھا کہ ہماری حکومت نے ایک سال میں مہمند، دیا مر بھاشا جیسے بڑے ڈیمز پرکام شروع کیا،اس معاہدے سے پاک چین دوستانہ تعلقات کا نیا باب شروع ہوگیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں